4

بلال حبشیؓ کا آقا

(یہ ایک انگریزی نظم کا مفہوم ہے جو ہیلی فیکس (برطانیہ) میں ایک حبشی مسلمان نے ایک بڑے جلوس کے سامنے پڑھی تھی)۔

زمین و آسمان کے خالق نے انسان کو پیدا کیااس کا مقدر بھی لکھ دیا۔

دولت مند کو آسودگی ملی اورغریب کو فاقہ مستی،

ایک میں تھاکہ خالق نے مجھے سیاہ رنگت دے دی

دنیا کے کسی خطے نے مجھے گوارہ نہ کیا۔

گورے نے مجھے بیڑیاں ڈال دیں۔

اور نفرت سے کہا: تم غلام ابن غلام ہو۔

میرے مویشی چراؤ اور میری زمینوں پر ہل چلاؤکہ تم محکوم ہو۔

میں نسل در نسل پستا رہا۔

بے آب و گیاہ میدان سے ایک پیکر رحمت اٹھا۔

اس نے ہاتھ پھیلا کر مجھے بلایا اور کہا:میری جانب بڑھو۔

میں تمہاری زنجیریں توڑنے والا ہوں۔

تمہیں مبارک ہو کہ آج کے بعدکسی گورے کو تم پر فضیلت نہیں ہوگی،

وہ کون تھا؟ کون تھا وہ؟

جس نے میرے زخم پر مرہم رکھا، وہ کون تھا؟

جس نے مجھے رحمت کی آغوش میں لے لیا

محمد ﷺ بلال حبشیؓ کا آقا

صلی اللہ علیہ وسلم

شیئر کیجیے
Default image
مرسلہ: میمونہ فریدی

تبصرہ کیجیے