حمد

مہہ خورشید و انجم مرغ و ماہی

تری قدرت کے جلوے ہیں الہی

اجالا دن کے ہنگاموں میں تیرا

تری ہی گیسوئے شب میں سیاہی

ہرا خاک چمن پر فرش ، تیرا

ترے دم سے ہے برگ گل حنائی

بہاروں میں ہے رنگ و نور تیرا

خزاؤں پر بھی تیری بادشاہی

پرندوں میں تری میٹھی اذانیں

صبا کیا ہے ؟ تری نغمہ سرائی

ہیں شاہد قوم عاد و نوح و موسی

ہوا پانی ہیں سب تیرے سپاہی

شکستہ دل شکستہ پا ہے بزمی

اسے بھی بخش مولی! مومیائی

شیئر کیجیے
Default image
سرفراز بزمی سوای مادھوپور راجستھان