موسم سرما اور جلد کی دیکھ بھال

سردی کا موسم بہت سی خواتین کے لیے بہت سارے مسائل لے کر آتا ہے، کیوں کہ اس موسم میں ان کی جلد کو کئی چیلنجز کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ تاہم اگر آپ تھوڑی سی توجہ دیں تو آپ اس موسم سے لطف اندوز ہوسکتی ہیں۔ اور آپ کی جلد بھی محفوظ رہ سکتی ہیں۔ یاد رہے کہ موسم سرما میں آپ کی جلد کو غیر معمولی دیکھ بھال کی ضرورت ہوتی ہے اور اس کی وجہ یہ ہوتی ہے کہ تیل پیدا کرنے والے غدود جو کہ جلد کے بالکل نیچے واقع ہوتے ہیں، غیر فعال ہوجاتے ہیں اور معمولی سے کم نمی پیدا کرتے ہیں۔ ایک تو یہ وجہ اوپر سرد ہوا کی وجہ سے جلد خشک ہونے لگتی ہے اور بالآخر جلد پر باریک لکیریں نمودار ہونے لگتی ہیں۔ اس کے علاوہ جلد دیگر مسائل سے بھی دوچار ہوجاتی ہے مثلاً چھلکے کی طرح اترنا، خارش، سرخ ہوجانا، ڈھیلا پڑ جانا اور ایگزیما وغیرہ۔

ان مسائل سے نمٹنے کا طریقہ یہ ہے کہ ان کا توڑ کیا جائے اور صابن کا استعمال بالکل بند کردیا جائے۔ کیوں کہ صابن کا استعمال جلد میں موجود چکنائی کو کم کرتا ہے۔ اس کی بجائے اپنے چہرے کو ملک کریم یا دودھ کی بالائی کو لیموں کے جوس میں بلینڈ کر کے لگائیں۔ اس میں چٹکی بھر ہلدی بھی ڈال دیں۔ کاسمیٹکس کا زیادہ استعمال ہیئر ڈرائر اور اسپرے، گرم پانی سے دیر تک غسل اور پرفیوم کا استعمال یہ سب آپ کی جلد اور بالوں کو خشک کرتے ہیں۔ ہر رات بستر پر جانے سے قبل ایک ٹیبل اسپون ملک کریم لے کر اس میں چند قطرے گلیسرین، زیتون کا تیل اور عرق گلاب شامل کر کے اچھی طرح مکس کرلیں۔ اسے پورے چہرے پر لگائیں۔ گردن اور ہاتھ پر بھی ملیں۔ ساری رات لگا رہنے دیں، صبح کو ٹیشو پیپر کی مدد سے چہرہ صاف کرلیں۔ اس کے بعد گرم پانی سے چہرہ دھولیں۔ جلد گرم پانی سے گرم ہوجائے تو اب ٹھنڈے پانی سے دھوئیں اور نرم تولیہ کی مدد سے تھپتھپا کر چہرہ صاف کرلیں۔

غسل کرنے سے قبل زیتون یا ناریل کے تیل میں چند قطرے عرق گلاب ملا کر پورے جسم کا مساج کریں۔ اس سے آپ کی جلد نرم اور چمک دار ہوجائے گی۔ اگر خشکی کی وجہ سے جلد چھلکے کی طرح ہوگئی ہے تو اپنی غذا میں وٹامن ’’اے‘‘ کا استعمال زیادہ کریں۔ کیوں کہ یہ وٹامن جلد کے بالکل نیچے چکنائی میں اسٹور ہوجاتا ہے۔ اگر جلد کے خشک ہونے کا عمل زیادہ شدید ہے تو اس وٹامن کی گولیاں بھی لی جاسکتی ہیں۔ تاہم اس کو زیادہ استعمال نہ کیا جائے کیوں کہ اس کی زیادتی جسم پر منفی اثرات پیدا کرسکتی ہے۔ اچھا ہوگا کہ استعمال سے قبل ڈاکٹر سے مشورہ لیا جائے۔

سردیوں میں جلد کا ایک اور عارضہ عام طور پر ایگزیما کی صورت میں ہوتا ہے۔ ابتدا میں جلد کی سطح سرخ ہوجاتی ہے مگر بعد میں خشک اور کھردری ہوجاتی ہے۔ اس سلسلے میں دوموثر نسخے بتائے جا رہے ہیں۔

ایک عدد اخروٹ کو گرینڈ کر کے اس کا تیل نکال لیا جائے۔ یعنی اس قدر گرینڈ کیا جائے کہ پیسٹ بن جائے۔ اس سے نکلے تیل کو متاثرہ جگہ پر دن میں چند بار لگائیں۔ اگر اس سے فائدہ نہ ہو تو ذیل کا نسخہ آزمائیں۔

خشک ناریل یعنی کھوپرا لے کر اسے چمٹے سے پکڑیں اور آگ میں جلائیں۔ جب یہ جل کر بالکل سیاہ ہوجائے اور یہ گرم بھی ہو تو اسے ٹین کی پلیٹ میں رکھیں اور کسی برتن سے فورا ڈھک دیں۔ چند سکنڈ کے بعد ڈھکن ہٹائیں گی تو آپ کو ڈھکن پر تیل کی ایک تہہ ملے گی۔ اس تیل کو دن میں دو مرتبہ متاثرہ جگہ پر لگائیں (رگڑکر)۔۔۔۔ ایک ہفتہ میں آرام آجائے گا۔

جلد پر خارش بھی سرد موسم میں اکثر ہوتی ہے۔ ایک ٹیبل اسپون صندل کی لکڑی کا تیل لیں اور اسی مقدار میں ناریل کا تیل لے کر اچھی طرح مکس کرلیں۔ دن میں دو مرتبہ خارش زدہ حصے پر اسے لگائیں، آرام آجائے گا۔ بیسل (Basil) کے پتوں کا جوس بھی موثر ہے۔

ایک اور خارش بہت سخت قسم کی ہوتی ہے جسے ’’ونٹراچنگ‘‘ کہتے ہیں۔ یہ عموماً جلد کے زیادہ خشک ہوجانے کی صورت میں ہوتی ہے۔ ضرورت سے زیادہ گرم کپڑے، ہاٹ ہاتھ لینے، سورج کی روشنی میں کم جانے، پسینے کے خارج نہ ہونے، ضرورت سے زیادہ صابن اور پرفیوم کے استعمال اور غیر متوازن غذا کی وجہ سے بھی ہوجاتی ہے۔ ہاتھ اور پاؤں عام طور پر اس سے متاثر ہوتے ہیں۔ اسے کم سے کم کرنے کے لیے روزانہ غسل کرنے سے قبل دو ٹیبل اسپون دہی اور زیتون کا تیل لے کر اچھی طرح مکس کریں۔ اس میں عرق گلاب کے چند قطرے بھی ڈال لیں۔ اچھی طرح مکس کر کے غسل سے قبل بدن پر اس مکسچر کو لگائیں۔ گرم کپڑے براہ راست جلد سے نہ ٹکرائیں۔ اندر کچھ پہن کر پھر گرم کپڑے پہنیں۔ ہاٹ ہاتھ کم سے کم کردیں۔ اسی طرح صابن کا استعمال بھی کم کردیں۔ گولیوں کی شکل میں وٹامن ’’اے‘‘ لیں اور روزانہ کم سے کم ایک گھنٹہ دھوپ میں ضرور بیٹھیں۔ ہر موسم میں جسم سے تھوڑا بہت پسینہ نکلنا چاہیے۔ اس سے جلد کو نرم اور نم رہنے میں مدد ملتی ہے۔

اگر آپ کے ہونٹ خشک ہوکر پھٹنے اور چھلکے کی طرح اترنے لگتے ہیں تو نسخہ ملاحظہ فرمائیں۔ گلاب کا ایک پھول لیں اور اس کے پتوں کو پیس کر پیسٹ بنالیں۔ اسی میں تھوڑی سی دودھ کی بالائی ملائیں اور ہونٹوں پر قدرے دباؤ کے ساتھ تب لگائیں جب آپ سونے جا رہے ہیں۔ اس سے ہونٹ نرم اور خوب صورت نظر آئیں گے۔ خشک جلد منہ کے آس پاس عموماً شکایت میں آتی ہے۔ اس معاملے میں وٹامن ’’بی‘‘ کی گولیاں کارآمد رہیں گی۔ ہاتھوں کو خارش اور پھٹنے سے بچانے کے لیے گھریلو کام کاج کرتے وقت دستانے (ربر کے) پہنے جائیں۔ بستر پر دراز ہونے سے قبل لیموں کا جوس، گلیسرین، عرق گلاب اور کولون یکساں مقدار میں لے کر پورے ہاتھوں پر اچھی طرح لگائیں۔ گھریلو کام کاج کرنے کے بعد ہاتھوں پر گلیسرین اور شوگر رگڑیں اور دو منٹ کے بعد دھولیں۔ اس سے بھی آپ کے ہاتھ نرم اور ہموار رہیں گے۔lll

شیئر کیجیے
Default image
قدسیہ سلیم ناگپور

Leave a Reply