جلد بوڑھا کردینے والی عام عادتیں

کیا آپ اپنی موجودہ عمر کے مقابلے میں زیادہ بڑی عمر کے نظر آتے ہیں؟ اگر آپ آئینے میں ایسا منظر دیکھنا نہیں چاہتے تو اپنی روز مرہ کی عادات میں تبدیلی لانا ہی سب سے بہترین طریقہ کار ثابت ہوگا۔ ناقص خوراک اور کم نیند وغیرہ بھی آپ کے چہرے کو بوڑھا جب کہ زندگی کی مدت کو کم کردیتے ہیں۔

ایسی چند عادات کے بارے میں جانئے جو آپ کو جلد بوڑھا کر سکتی ہیں۔

ایک وقت میں کئی کام یا ملٹی ٹاسک

اگر آپ ہر وقت متعدد کام بیک وقت کرنے کے عادی ہیں تو اس مصروف زندگی کے تناؤ کی قیمت آپ کے جسم کو ادا کرنا پڑے گی۔

متعدد سائنسی تحقیقی رپورٹس میں یہ بات سامنے آچکی ہے کہ بہت زیادہ تناؤ جسمانی خلیات کو نقصان پہنچانے اور عمر کی رفتار بڑھانے کا سبب بنتا ہے۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ ایک وقت میں ایک کام کریں اور اسے مکمل کرنے کے بعد ہی کسی اور چیز پر توجہ دیں۔

مٹھاس کا زیادہ استعمال

میٹھی اشیاء کس کو پسند نہیں ہوتیں! مگر یہ جسمانی وزن میں اضافے کے ساتھ ساتھ آپ کے چہرے کی عمر بھی بڑھا دیتی ہیں۔ شوگر یا چینی زیادہ استعمال کی وجہ سے ہمارے خلیات سے منسلک ہوجاتی ہے اور اس کے نتیجے میں چہرے سے سرخی غائب ہوجاتی ہے اور آنکھوں کے نیچے گہرے حلقے ابھر آتے ہیں۔

اسی طرح جھریاں اور ہلکی لکیریں بھی چہرے کو بوڑھا بنا دیتی ہیں۔ تو میٹھی اشیاء سے کچھ گریز آپ کے چہرے کی چمک برقرار رکھنے میں مددگار ثابت ہوتا ہے۔

کم نیند

کم سونا نہ صرف آنکھوں کے گرد بدنما حلقوں کا سبب بنتا ہے بلکہ یہ زندگی کی مدت بھی کم کر دیتا ہے۔ روزانہ سات گھنٹے سے کم نیند لینے کی عادت دن بھر کم توانائی، ذہنی سستی، توجہ مرکوز رکھنے میں مشکلات یا موٹاپے وغیرہ کا سبب بن جاتی ہے۔

زیادہ ٹی وی دیکھنا

آج کل لوگوں کا خاصا وقت ٹی وی پروگرام دیکھتے ہوئے گزرتا ہے، مگر برٹش جرنل آف اسپورٹس میڈیسین کی ایک تحقیق کے مطابق ایک گھنٹے تک لگاتار ٹی وی دیکھنا ۲۲ منٹ کی زندگی کم کر دیتا ہے۔ اسی طرح جو افراد روزانہ اوسطاً چھ گھنٹے ٹی وی دیکھتے ہیں وہ اس عادت سے دور رہنے والے افراد کے مقابلے میں پانچ سال کم زندہ رہ پاتے ہیں۔

اس کی وجہ یہ ہے کہ ٹی وہ دیکھنے کے لیے آپ زیادہ تر بیٹھے رہتے ہیں، جس کے باعث جسم شوگر کو ہمارے خلیات میں جمع کرنا شروع کردیتا ہے، جس سے موٹاپے کا خطرہ بڑھ جاتا ہے۔

اس سے بچنے کا ایک طریقہ یہ ہو سکتا ہے کہ اگر آپ ٹی وی دیکھ رہے ہیں تو ہر تین منٹ بعد کچھ دیر کے لیے اٹھ کر چہل قدمی بھی کریں۔

زیادہ وقت بیٹھ کر گزارنا

دن کا زیادہ وقت بیٹھ کر گزارنے یا سست طرزِ زندگی کے عادی افراد میں موٹاپے کا خطرہ تو ہوتا ہی ہے، اس کے ساتھ ساتھ گردوں، دل کے امراض اور کینسر کا امکان بھی بڑھ جاتا ہے، اگر خود کو صحت مند رکھنا ہو تو روزانہ ورزش کی عادت کو اپنانا سب سے زیادہ فائدہ مند ہوگا۔

بہت زیادہ میک اپ کا استعمال

چہرے پر بہت زیادہ میک اپ کا استعمال بھی بڑھاپے کی جانب آپ کا سفر تیز کردے گا۔ بہت زیادہ میک اپ خاص طور پر تیل والی مصنوعات جلد میں موجود ننھے سوراخوں یا مساموں کو بند کر کے مسائل کا سبب بن جاتی ہیں۔

اسی طرح جلدی مصنوعات کے الکحل اور کیمیکل سے بنی خوشبو کے ساتھ استعمال سے جلد سے قدرتی نمی ختم ہو جاتی ہے اور وہ خشک ہوجاتی ہے جس سے قبل از وقت جھریاں ابھر آتی ہیں۔

نیند کے دوران چہرہ تکیے پر رکھنا

پیٹ کے بل یا ایک سائڈ پر لیٹ کر سونے سے آپ کا چہرہ تکیے میں دب کر رہ جاتا ہے اور جھریاں ابھرنے کے ساتھ بڑھاپے کا سبب بنتا ہے۔

ایک تحقیق کے مطابق چہرہ مسلسل تکیے میں دبا رہے تو وہ اندر سے کمزور ہو جاتا ہے اور موجودہ عمر کے مطابق نظر نہیں آتا۔ اگر ایسا مسلسل کیا جائے تو جلد ہموار نہیں رہتی۔

اسٹرا کے ذریعے مشروب پینا

کسی مشروب کو اسٹرا کے ذریعے پی کر آپ دانتوں کو تو داغ لگنے سے بچا سکتے ہیں مگر ہونٹ سکڑنے کا یہ عمل آنکھوں اور چہرے کے ارد گرد جھریاں پڑنے کا سبب ضرور بن جاتا ہے۔ ایسا اس وقت بھی ہوتا ہے جب سگریٹ نوشی کی جائے۔

روغن کا مناسب استعمال

خوراک میں کچھ حد تک چربی کا استعمال شخصیت میں جوانی کے اظہار اور احساس کے لیے ضروری ہوتا ہے۔

اومیگا تھری فیٹی ایسڈ سے بھرپور مچھلی اور کچھ نٹس جیسے اخروٹ وغیرہ جلد کو نرم و ملائم بناتے اور جھریوں سے بچاتے ہیں، جب کہ دل اور دماغ کی صحت کو بھی بہتر بناتے ہیں۔

جھک کے بیٹھنا

اپنے کمپیوٹر یا لیپ ٹاپ کے کی بورڈ کے سامنے گھنٹوں کمر جھکا کر بیٹھے رہنے سے آپ کی ریڑھ کی ہڈی بدنما ٹیڑھے پن کی شکل میں ڈھل جاتی ہے۔ قدرتی طور پر یہ ہڈی متوازن ایس شکل کے جھکاؤ کی حامل ہوتی ہے تاکہ ہمیں چلنے پھرنے میں مشکل نہ ہو۔ مگر گھنٹوں تک جھکے رہنے سے قدرتی شکل تبدیل ہو جاتی ہے، جس سے پٹھے اور ہڈیاں غیر معمولی دباؤ کا شکار ہوکر قبل از وقت بوڑھوں کی طرح چلنے پھرنے پر مجبور کردیتی ہیں۔lll

شیئر کیجیے
Default image
ڈاکٹر عمران حسین

Leave a Reply