گلدستہ

فرمانِ رسولﷺ
حضرت عبیدہؓ ملیکی کہتے ہیں کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا: اے اہل قرآن تم قرآن سے تکیہ نہ کرو۔ شب و روز قرآن کی تلاوت کرو جیسا کہ اس کی تلاوت کا حق ہے، اسے پھیلاؤ۔ اسے خوش آوازی سے پڑھو اور جو کچھ اس کے اندر ہے اس میں تدبر کرو۔ شاید کہ تم فلاح یاب ہوجاؤ۔ اس کے ثواب میں جلدی نہ کرو، اس کا اجر و ثواب تو رکھا ہوا ہے۔
طلعت ناز۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔دہلی
حکمت کے موتی
— اپنے نفس کی اصلاح کرنا سب سے اچھی مصروفیت ہے۔
— قناعت ایک ایسا خزانہ ہے جو خرچ کرنے سے کم نہیں ہوتا۔
— خود ستائی بہت بڑی حماقت ہے اور علم انسان کا سب سے بڑا رہنما ہے۔
— خوشامد اور تعریف شیطان کے نہایت مضبوط ہتھیار ہیں۔
— بہترین انسان وہ ہے جس کا اخلاق اچھا ہو۔
پیرزادہ معراج الدین۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔سلّر، کشمیر
اچھی باتیں
— کشادہ دلی سے پیش آنا پہلی نیکی ہے۔
— دوسروں کے حال پر غور کرنے سے نصیحت حاصل ہوتی ہے۔
— مصیبت میں گھبرانا سب سے بڑی مصیبت ہے۔
— سچائی امانت ہے اور جھوٹ خیانت۔
— سب سے بہتر عمل اخلاص ہے۔ جس طرح روح کے بغیر جسم مردہ ہے اسی طرح اخلاص کے بغیر عمل بے کار ہے۔
نائلہ کوثر۔۔۔۔۔۔۔ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔نئی دہلی
تعلیم یافتہ
— تعلیم یافتہ شخص کے یہی معنیٰ ہیں کہ وہ جس کام میں ہاتھ ڈالے اسے حسن و خوبی کے ساتھ انجام دے۔ (مولوی عبدالحق)
ساجدہ انیس ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔پونے
قیمتی باتیں
— زندگی ایک پھول اور علم اس کی خوشبو ہے۔
— اگر تمہیں زندگی سے محبت ہے تو وقت سے محبت کرو۔
— سب سے پہلی اور سب سے اعلیٰ محبت ماں کی محبت ہے۔
خالدہ رحمن۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ اناؤ

اقوال زریں

— رشوت انصاف کو کھا جاتی ہے۔

— توبہ گناہ کو کھا جاتی ہے۔

— غصہ عقل کو کھا جاتا ہے۔

— جھوٹ رزق کو کھا جاتا ہے۔

— تکبر علم کو کھا جاتا ہے۔

— فکر عمر کو کھاجاتی ہے۔

شاہانہ افروز خانم۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔نامعلوم

شکوہ نہ کرو

— شکوہ خدا سے نہ کرو گناہ گار ہوجاؤگے۔

— شکوہ محبوبہ سے نہ کرو ناراض ہوجائے گی۔

— شکوہ تقدیر سے نہ کرو وہ سن نہیں سکتی۔

— شکوہ سماج سے نہ کرو مایوسی ہوگی۔

— شکوہ بندوں سے نہ کرو مذاق اڑے گا۔

صبیحہ کوثر ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ہاسن، کرناٹک

اقول زریں

— زندہ رہو حوصلے کے ساتھ۔

— جھکو وقار کے ساتھ۔

— سنو توجہ کے ساتھ۔

— پڑھو محنت کے ساتھ۔

— عبادت کرو اخلاق کے ساتھ۔

— توبہ کرو ندامت کے ساتھ۔

آسیہ سلطانہ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔سرپور کاغذ نگر

ہمارا حال

— ہم نے خدا کو پہچانا …مگر… اس کا حق ادا نہیں کیا۔

— ہم نے محبتِ رسول کا دعویٰ کیا … مگر… سنتِ رسول پر عمل نہ کیا۔

— ہم نے جنت کو چاہا … مگر… اس میں داخلے کا انتظام نہیں کیا۔

— ہم نے موت کو حق جانا … مگر… اس کے لیے تیاری نہ کی۔

— ہم نے اللہ کی نعمتیں کھائیں … مگر… اس کا شکر ادا نہ کیا۔

— ہم نے مردوں کو دفنایا… مگر … عبرت حاصل نہ کی۔

سمیہ عابدی۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔جامعۃ الصالحات، رامپور

زکوٰۃ نہ دینے کا گناہ

— آنحضرت ﷺ نے فرمایا: ’’اللہ جس کو مال دے اور وہ اس کی زکوٰۃ ادا نہ کرے تو قیامت کے دن اس کا مال ایک ایسے گنجے سانپ کی شکل میں بن کر جس کی آنکھوں پر دو کالے داغ ہوں گے، اس کے گلے کا طوق بنایا جائے گا۔ پھر اس کی دونوں باچھیں پکڑ کر کہے گا میں تیرا مال ہوں۔ میں تیرا خزانہ ہوں۔

عمران

شیئر کیجیے
Default image
Jamil Sarwer

Leave a Reply