گھر چمکائیں

گھر کی  صفائی ستھرائی کے لیے آج کل بے شمار کلینرز دستیاب ہیں، جنہیں بیشتر خواتین اپنی خریداری کی فہرست میں ضرور شامل رکھتی ہیں۔ ان کلینرز کی مدد سے گھر کا فرش اور کاؤنٹرز وغیرہ صاف تو ہو جاتے ہیں لیکن چوں کہ ان میں مختلف اقسام کے کیمیکلز شامل ہوتے ہیں، اس لیے یہ عموماً صحت کے لیے نقصان دہ ثابت ہوتے ہیں۔ مشاہدے میں آیا ہے کہ گھر میں بلیچ جیسے کلینرز کے استعمال سے نہ صرف بچوںبلکہ بڑوں کو بھی آتھما کی شکایت ہوجاتی ہے۔ جب کہ کچھ کیمیکلز ایسے ہیں جن کے استعمال سے حساس جلد کی حامل خواتین مختلف قسم کی الرجیز میں مبتلا ہوجاتی ہیں۔ لہٰذا کیا یہ بہتر نہیں کہ آپ ہری بھری اور صحت بخش جڑی بوٹیوں اور گھریلو استعمال میں شامل بے ضرر قسم کی چیزوں سے اپنے کلینرز خود بنائیں۔ اس طرح نہ صرف آپ کی صحت محفوظ رہ پائے گی بلکہ پیسوں کی بچت بھی ہوگی۔ یہاں آپ کے لیے ہر بل کلینرز بنانے کے دو طریقے پیش کیے جا رہے ہیں جن کی مدد سے آپ اپنے گھر کا فرش، کاؤنٹرز، اوون، چولھے اور سلیب وغیرہ بخوبی صاف کرسکیں گی۔

ہربل اسپرے

ایک سے دو مٹھی بھر پودینہ، لیونڈر کے پتے، روز میری اور لیمن گراس لے کر اچھی طرح کچل لیں۔ اسپرے بنانے کے لیے ان تمام جزمی بوٹیوں کا موجود ہونا ضروری نہیں، اگر ان میں سے کوئی ایک دستیاب نہ بھی ہو تو کوئی مضائقہ نہیں۔ اس کے علاوہ تازہ جڑی بوٹیوں کے بجائے خشک پتیاں بھی استعمال کی جاسکتی ہیں۔ کچلی ہوئی جڑی بوٹیوں کو کھلے منہ کے ایک جار میں ڈالیں اور اوپر سے سفید سرکہ بھردیں۔ اب جار کو بند کر کے دو تین روز کیے لیے رکھ دیں تاکہ تمام اجزاء اچھی طرح یک جان ہوجائیں۔ پھر جار میں سبزیاں نکال دیں اور محلول کو کسی اسپرے بوتل میں بھر لیں۔

ہربل اسپرے تیار کرنے کا ایک اور طریقہ یہ ہے کہ جڑی بوٹیوں کے بجائے پانچ سے دس ٹی بیگز سر کے میں دال کر رکھ دیں۔ پھر دو سے تین روز بعد انہیں نکال دیں اور محلول کو اسپرے بوتل میں بھر کر استعمال کریں۔

یوکلپٹس فلور واش

فرش کی صفائی کے لیے یہ محلول بنانے کی خاطر ایک چائے کا چمچہ پوکلپٹس آئل، دو کھانے کے چمچے میتھائل اسپرٹ اور تقریباً پانچ لٹر گرم پانی درکار ہوگا۔ تمام اجزاء کو ایک بالٹی میں مکس کریں پھر پورے گھر میں اس محلول کا پونچھا لگائیں اور خشک ہونے دیں۔ پوکلپٹس قدرتی اینٹی سپٹک ہے اور اس میں جراثیم کش خصوصیت پائی جاتی ہیں۔ یہی ہے کہ اس سے تیار کیے گئے فلور واش کو آپ گھر کے ہر کمرے کی صفائی میں استعمال کرسکتی ہیں۔ تاہم صفائی کرتے ہوئے اس بات کا خیال رکھیں کہ آپ کا پوچھا محلول میں بالکل گیلا نہ ہو بلکہ صرف نم ہو۔ مزید یہ کہ پونچھا لگانے سے پہلے فرش کو اچھی طرح ویکیوم کریں یا جھاڑو سے صاف کریں۔

آپ نے دیکھا کہ گھر داری کے لیے صحت بخش طریقے اختیار کرنا مشکل نہیں اور ان کے فائدے بھی بے شمار ہیں۔ لہٰذا اپنی روٹین کو توڑتے ہوئے ان نئے طریقوں پر عمل کر کے ضرور دیکھیں۔lll

شیئر کیجیے
Default image
فہمیدہ امۃ الرحیم

Leave a Reply